Sunday, March 3, 2024
الرئيسيةNewsملک کو مستقل ترقی کی ضرورت ہے، شارٹ کٹ سیاست کی نہیں:...

ملک کو مستقل ترقی کی ضرورت ہے، شارٹ کٹ سیاست کی نہیں: پی ایم مودی

ناگپور/ نئی دہلی، 11 دسمبر

۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کے روز کچھ سیاسی پارٹیوں پر ذاتی فائدے کے لیے ملک کی معیشت کو تباہ کرنے کا الزام لگایا اور ہم وطنوں پر زور دیا کہ وہ ایسی خود غرض سیاسی جماعتوں اور ان کے لیڈروں سے ہوشیار رہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو شارٹ کٹ سیاست نہیں پائیدار ترقی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ شارٹ کٹ سیاست سے ملک ترقی نہیں کر سکتا۔

وزیر اعظم ناگپور میں 75,000 کروڑ روپے کے مختلف ترقیاتی پروجیکٹوں کا آغاز کرنے کے بعد ایک جلسہ عام سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ آزادی کے 75 سال کے امرت مہوتسو میں 75 ہزار کروڑ روپے کے ان ترقیاتی کاموں کے لئے مہاراشٹر کے عوام کو بہت بہت مبارکباد۔

انہوں نے کہا، آج آپ سے بات کرتے ہوئے، میں مہاراشٹر اور ملک کے لوگوں کو ہندوستان کی سیاست میں آنے والی بگاڑ کے بارے میں بھی خبردار کرنا چاہتا ہوں۔ یہ شارٹ کٹ سیاست کی کج روی ہے۔ یہ سیاسی مفادات کے لیے ملک کا پیسہ لوٹنا کج روی ہے۔ یہ ٹیکس دہندگان کی محنت کی کمائی کو لوٹنے کی کج روی ہے۔

وزیراعظم نے کسی سیاسی جماعت یا رہنما کا نام لیے بغیر کہا کہ یہ سیاسی جماعتیں اور شارٹ کٹ اپنانے والے رہنما ملک کے ہر ٹیکس دہندہ کے سب سے بڑے دشمن ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کا مقصد صرف اقتدار میں آنا ہے، جن کا مقصد جھوٹے وعدے کرکے حکومت پر قبضہ کرنا ہے۔ وہ کبھی ملک نہیں بنا سکتے۔ انہوں نے کہا، ’’آج ایسے وقت میں جب ہندوستان اگلے 25 سال کے اہداف پر کام کر رہا ہے، کچھ سیاسی جماعتیں اپنے ذاتی مفاد میں ہندوستان کی معیشت کو تباہ کرنا چاہتی ہیں۔‘‘ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی ملک شارٹ کٹ کے ساتھ نہیں چل سکتا، ملک کی ترقی، پائیدار ترقی، پائیدار حل کے لیے کام کرنا، طویل مدتی وژن بہت ضروری ہے اور پائیدار ترقی کا بنیادی ڈھانچہ ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ جو سیاسی جماعتیں ‘کم کماؤ، روپیہ خرچ کرو’ کی پالیسی اپنا کر چل رہی ہیں، وہ اس ملک کو اندر سے کھوکھلا کر دیں گی۔ دنیا کے کئی ممالک میں ہم نے اس طرح کی بدانتظامی کی وجہ سے پوری معیشت کو تباہ ہوتے دیکھا ہے۔ ہم نے مل کر بھارت کو ایسے شرارتوں سے بچانا ہے۔ ہمیں یاد رکھنا ہوگا کہ ایک اور ‘آمدانی اٹھنی، خرچہ روپیہ’ بے سمت حکمت عملی اور صرف خود غرضی ہے۔ دوسری طرف لگن اور قومی مفاد کا جذبہ ہے، مستقل ترقی اور مستقل حل کی کوشش ہے۔ آج ہندوستان کے نوجوانوں کو جو موقع ملا ہے، ہم اسے اس طرح جانے نہیں دے سکتے۔

RELATED ARTICLES

ترك الرد

من فضلك ادخل تعليقك
من فضلك ادخل اسمك هنا

Most Popular

Recent Comments